ابیٹ کی وساطت سے – ایڈوب اسٹاک

گلنے کا عمل کیا ہے؟

corrosionگلنے کا عمل اس وقت ہوتا ہے جب ماحولیاتی عوامل کی وجہ سے کوئی مواد خراب ہوجاتا ہے۔گلنے کا عمل ایک فطری عمل ہے جو اس وقت ہوتا ہے جب تین شرائط پوری ہوں۔

• نمی کی موجودگی
• ایک دھات کی سطح
• “آکسیئڈائزنگ ایجنٹ” (جسے”الیکٹران “قبول کنندہ بھی کہا جاتا ہے)

اس عمل کے نتیجے میں ، دھات ، اس کے نمکیات میں سے ایک میں تبدیل کرہو جاتا ہے یعنی” آکسائڈ / ہائیڈرو آکسائیڈ /سلفاییڈز”،جو مادے پرمنحصر ہے۔دھات کیمیائی طور پر غیر مستحکم ہے اور اس کا نمک زیادہ مستحکم ہے۔گلنے کی سب سے عام شکل زنگ لگنا ہے۔ جب لوہے کوزنگ لگتاہے تو ، سرخ رنگ کےتہہ دارمادہ جو گلنےعمل کے نتیجے میں تشکیل پایا ہے وہ” آئرن آکسائڈ” ہوتا ہے۔

 

دھات پر اثرات

گلنے کا عمل متعدد طریقوں سے دھاتوں کو متاثر کرتا ہے۔ جب دھات کی ساخت گَل جاتی ہےتو ، ان کی سالمیت کمزور پڑجاتی ہے اور وہ ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوجاتی ہے۔ایک بار گلنا کا عمل شروع ہونے کے بعد ، یہ تیزی سے پھیل سکتا ہے جس کی وجہ سے چوکناّ رہناچاہیے اور جب یہ شروع ہوتا ہے تو اسے فوراً روکنا ضروری ہوتا ہے۔

گلنے سے بچاؤ کے طریقے

گلنے سےبچاؤ کے لئے مندرجہ ذیل عام طریقے استعمال کیے جاتے ہیں۔

 استعمال کی جانے والی دھات کا انتخاب

گلنے کے عمل سے بچنے کا ایک آسان حل ایسی دھات کا استعمال ہے جو گلنے کے اس عمل سے مزاحم ہیں۔” ایلومینیم “اور “سٹینلیس سٹیل” اس طرح کی دھاتوں کی عام مثال ہیں۔

حفاظتی ملعمع کاری

گلنےکےعمل کی روک تھام کا ایک مؤثر طریقہ پینٹ کی ایک پرت کا استعمال کرنا ہے۔ پینٹ دھات اور اُن عناصر کے مابین رکاوٹ کے طور پر کام کرتا ہے جو” الیکٹرو کیمیکل چارج” کے بہاؤ کو روکتا ہے جو کہ گلنے کا سبب بنتاہے۔

گلنے سے بچاؤ کے لئےسستا حل پاؤڈر کی ملعمع کاری کرنا ہے۔ دھات کی سطح پر ملعمع کاری کرنے کے لئے ایک خشک پاؤڈر استعمال ہوتا ہے۔اس کے بعد دھات کو گرم کیا جاتا ہے جس کی وجہ سے دھات پر پاؤڈرکی یکساں تہہ بن جاتی ہے۔مختلف پاؤڈر مرکبات جو استعمال کیے جاتے ہیں وہ ہیں”پولی ایسٹر” ،”نائیلان” ، “یوریتھین” ،” ایپوکسی “اور “ایکریلک”۔

ماحولیاتی حالات کو قابو کرنا

گلنے کا عمل دھات اور ماحول میں موجود بعض گیسوں کے مابین کیمیائی رد عمل کا نتیجہ ہوتاہے۔اگر ماحول میں ان گیسوں کی موجودگی پر قابو پایا جاسکے ، تو اس رد عمل پر قابو پایا جاسکتا ہے۔اس سلسلے میں آسان اقدامات بارش اورنمی کے ماحول سے بچانا ہیں۔ پیچیدہ اقدامات ماحول کے “گندھک / آکسیجن / کلورین” کی موجودگی کو قابو کرنا ہیں۔

پیچیدہ اقدام کی ایک مثال پانی کو صاف کرنا ہے جو “سافٹنرز” استعمال کرکے “واٹر بوائیلرز “میں موجود ہے۔ “سافٹنر” پانی میں “کیلشیم اور میگنیشیم “کو نکال دیتا ہے ، جو انتہائی رد عمل والی دھاتیں ہیں اور گلنے کی صلاحیت کو بڑھاتی ہیں۔اس کے علاوہ ،”سافٹنر” پانی میں آکسیجن کی مقدار اور پانی کی کھارے پن کو بھی قابو میں کرتا ہے۔

“سیکریفیشل” ملمع کاری

دھات کی سطح پر کسی اور دھات ، جس میں “آکسیڈائزیشن” کی صلاحیت نسبتاً زیادہ یا کم ہوتی ہے،کی ملمع کاری کے ذریعے گلنے کی روک تھام کی جاسکتی ہے۔

“سیکریفیشل” ملمع کاری دو طرح کی ہوتی ہیں: “اینوڈک” تحفظ اور “کیتھوڈک” تحفظ

“اینوڈک “تحفظ

“اینوڈک “تحفظ ، جس سطح کی حفاظت کی ضرورت ہوتی ہے اس پر ایک ایسی دھات کی ملمع کاری کی جاتی ہے جو کم رد عمل کی حامل ہوتی ہے (جیسے ٹِن)۔ دی گئی مثال کو استعمال کرتے ہوئے ، ٹِن گلنےکے لحاظ سے زیادہ حساس نہیں ہے لہذا جس سطح پر اس کا اطلاق کیا جارہا ہے وہ محفوظ رہے گی جب تک کہاسکی تہہ اُس پر موجود ہے۔اس “اینوڈک “تحفظ کو استعمال کرنے کی وجہ یہ ہے کہ اس عمل میں ، دھات کی سطح جس کو بچانا ہے وہ ایک” اینوڈ” بن جاتا ہے۔

“اینوڈک “تحفظ ،ذخیرے کیلئے استعمال ہونے والے ٹینکوں کی حفاظت کے لئے استعمال کیا جاتا ہے، جو “کاربن اسٹیل”سے بنے ہوتے ہیں، جو پچاس فیصد” کاسٹک سوڈا “اور”سلفیورک ایسڈ” کو محفوظ کرنے کے لئے استعمال ہورہے ہیں۔ “کیتھوڈک” تحفظ کو ایسے ماحول میں استعمال نہیں کیا جاسکتا ہے کیونکہ اس کی موجودہ ضروریات انتہائی زیادہ ہوں گی۔

“کیتھوڈک “تحفظ

لوہے کے مرکب اسٹیل کی سطح پر “زِنک” کی تہہ لگانا”کیتھوڈک” تحفظ کی عام مثال ہے۔ اس عمل کو” گیلوانیائزنگ” بھی کہا جاتا ہے۔چونکہ” زِنک” اسٹیل کے مقابلے میں زیادہ رد عمل کا حامل ہے ، لہذا یہ گَل جائے گا۔ یہ”آکسائڈائز”ہو جائے گا جس کے نتیجے میں اسٹیل کےگلنے کے عمل کو روکے گا۔اس عمل کو “کیتھوڈک” تحفظ کو پکارنے کی وجہ یہ ہے کہ اس عمل میں ، دھات کی سطح جس کو محفوظ بنانا ہے وہ “کیتھوڈ “بن جاتا ہے۔

“کیتھوڈک “تحفظ اکثر اسٹیل پائپ لائنوں کی حفاظت کے لئے استعمال کیا جاتا ہے ،جو ایندھن یا پانی کیلئے ، جہاز کےخول ، گرم پانی کےٹینکس ، اور سمندری تیل کے پلیٹ فارم پر استعمال کیے جاتے ہیں۔

ڈیزائن میں ترمیم

گلنے کی روک تھام کا ایک غیر معمولی طریقہ ڈھانچے کو اس انداز سے ڈیزائن کرنا ہے جو گلنے کے عمل کو روکتا ہے اور اس کے نتیجے میں ،گلنے کی روک تھام کیلئے کی گئی ملمع کاری کی عمر اورپائیداری میں اضافہ ہوتا ہے۔مثال کےطور پر ، ڈیزائن ایسے ہونے چاہئیں جو پانی اور دھول کو پھنسنے سے روکیں ، ہوائی دھاروں کے بہاؤ میں آسانی پیدا کریں اور شگافوں سے بچیں۔ آخر میں ،اس بات کو یقینی بنانا چاہئے کہ ڈیزائن ایسا ہو کہ زیر غور ڈھانچہ باقاعدہ محا فظت کی انجام دہی کے لئےقابل رسائی ہو۔

گلنے کےعمل کو روکنے والے

گلنے کے عمل کی روک تھام کا دوسرا طریقہ یہ ہے کہ گلنے سے روکنے والے مادوں کا استعمال کیا جائے۔ یہ ایسے کیمیائی مادے ہیں جو دھات کی سطح یا گردونواح میں موجود گیسوں کے ساتھ رد عمل ظاہر کرتے ہیں اور اُس کیمیائی رد عمل کوروکتے ہیں جو گلنےکا سبب بنتے ہیں۔روکنے والے اِن مادوں کو دھات کی سطح پرحفاظتی تہہ لگانےکے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔ دو قسمیں ہیں جن میں روکنے والے کیمیائی مادےاستعمال کیے جاسکتے ہیں۔ اِن کو ایک مناسب” سالوینٹس “کے ساتھ ملا یا جاسکتا ہے۔ نتیجتاً حاصل ہونے والا محلول دھات کی سطح پر لگایا جاتا ہے۔یا ، عام پھيلاو کی تکنیک کا استعمال کرتے ہوئے، ان کو حفاظتی تہہ کے طور پر لگایا جاسکتا ہے۔گلنے سے روکنے والے مادوں کے اطلاق کے اِس عمل کو “پیسیویشن “کہا جاتا ہے۔

زنگ خوردگی

اس عمل میں ، ایک حفاظتی مواد (عام طور پر کسی قسم کا دھات آکسائڈ) دھات کی سطح پر ایک پرت لگانے کے لئے استعمال ہوتا ہے۔ یہ پرت گلنے کےعمل کے خلاف دھات کی سطح کی حفاظت ہے۔ پرت کی تشکیل کو متاثر کرنے والے عوامل میں آس پاس کا درجہ حرارت ، آس پاس کے ماحول کا PH اور ارد گرد کے ماحول کی کیمیائی ترکیب شامل ہیں۔اس عمل کے اضافی فوائد میں سے ایک یہ ہے کہ اس ڈھانچے پر آہستہ آہستہ “پیٹینا ” نفیس زرد رنگ تشکیل پاتا ہے جہاں اس پرت کا اطلاق ہوتا ہے۔ اس کے نتیجے میں وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس ڈھانچےکی خوبصورتی میں مزید اضافہ ہوتا ہے۔ یہ ایسی چیز ہے جس کوتانبے کی ٹائلوں والے چھتوں پر دیکھا جاسکتا ہے ۔زنگ خوردگی کے عمل کی ایک اور مثال مجسمہ آزادی کی رنگت ہے۔ ایک پیٹینا ، جو زرد کا ہوتاہے ، اس ڈھانچے کے اوپر آشکار ہو جاتا ہے جو نیچے کے تانبے کے لئے گلنے کی راہ میں رکاوٹ کا کام کرتا ہے۔گلنے کے عمل کو روکنے والےمادے عام طور پر” کیمیائی پیداواری فیکٹریوں “،” پیٹرولیم ریفائنریز” اور”واٹر ٹریٹمنٹ فیکٹریوں” میں استعمال ہوتے ہیں

ایک فوری قدم جو آپ اٹھاسکتے ہیں وہ ہے” WD-40 Multi-Use-Product” کا استعمال کرنا۔یہ اسپرے لمبے عرصے تک ماحول میں پڑے رہنے والی یا زیادہ عرصے تک مکان کے اندر رہنے والی دھات کے پرزوں کی حفاظت کرنے کی اہلیت رکھتا ہے۔ مشورہ دیا جاتا ہے کہ باقاعدگی سے WD-40 دوبارہ لگایاکریں۔